نیا ایجوکیشن پالیسی - ٢٠٢٠ : بھارت میں ودیشی یونیورسٹیز کو کیمپس کھولنے کی میلی اجازت

 30 Jul 2020 ( آئی بی ٹی این بیورو )
POSTER

بھارت نے اب نئی تعلیمی پالیسی کے تحت غیر ملکی یونیورسٹیوں کے لئے اپنے دروازے کھول دیئے ہیں۔ دنیا کی نامور یونیورسٹیاں اب ہندوستان میں اپنے کیمپس کھول سکیں گی۔

اگرچہ ، ماہرین کے مطابق ، یہ نہیں کہا جاسکتا ہے کہ آیا یہ تبدیلی جلد ہی زمین پر آسکے گی یا نہیں ، لیکن بہت سے لوگوں کا خیال ہے کہ ہندوستان میں اعلی 200 غیر ملکی یونیورسٹیوں کے کھلنے سے یہاں کی اعلیٰ تعلیم کی سطح میں بھی اضافہ ہوگا۔ بہت سے لوگ یہ بھی مانتے ہیں کہ اس سے دماغ کی نالیوں کو روکنے میں بھی مدد ملے گی۔

غیر ملکی یونیورسٹیوں کو ہندوستان لانے کے بارے میں مودی سرکار کا موجودہ موقف بی جے پی کے اس پہلے موقف کے بالکل برعکس ہے جس نے غیر ملکی تعلیمی اداروں پر یو پی اے -2 حکومت کے ذریعہ لائے گئے انٹری اور آپریشن بل 2010 کو لاگو کیا تھا۔

وزیر اعظم مودی کی حکمراں جماعت بشمول ہندوستان کے بائیں بازو کے رہنما بھی ، سابقہ ​​حکومتوں کی جانب سے غیر ملکی یونیورسٹیوں کو ہندوستان میں جانے کی کوششوں کی مخالفت کرتے رہے ہیں۔

لیکن بہت سے سرکاری عہدیداروں نے ان اقدامات پر اصرار کیا ، کیونکہ ہر سال ساڑھے سات لاکھ سے زیادہ ہندوستانی طلباء اربوں ڈالر بیرون ملک تعلیم حاصل کرنے میں صرف کرتے ہیں۔

بدھ کے روز ، ہائر ایجوکیشن کے سکریٹری امت کھارے نے صحافیوں کو بتایا کہ حکومت دنیا کی اعلی درجہ کی یونیورسٹیوں کو ہندوستان میں اپنے کیمپس کھولنے کا موقع فراہم کرے گی۔

تاہم ، اس فیصلے کے نقادوں کا یہ بھی کہنا ہے کہ اعلی کلاس یونیورسٹیاں کیوں ہندوستان میں اپنا کیمپس کھولنا چاہیں گی؟ جب حکومت ہند نے اپنی نئی تعلیمی پالیسی کے تحت زیادہ سے زیادہ فیس مقرر کی ہے۔ یعنی اب یونیورسٹیاں مطلوبہ رقم اکٹھا نہیں کرسکیں گی۔ نیز ، نئی تعلیمی پالیسی کے تحت اعلی تعلیمی اداروں کو فیس وصول کرنے کے معاملے میں زیادہ شفافیت لانا ہوگی۔

 

(Click here for Android APP of IBTN. You can follow us on facebook and Twitter)

Share This News

About sharing

اشتہار

https://www.ibtnkhabar.com/

 

https://www.ibtnkhabar.com/

Al Arabiya


https://www.ibtnkhabar.com/

https://www.ibtnkhabar.com/

https://www.ibtnkhabar.com/

https://www.ibtnkhabar.com/

https://www.ibtnkhabar.com/